آج جانے کی ضد نہ کرو۔۔

آج جانے کی ضد نہ کرو۔۔
یونہی پہلو میں بیٹھے رہو۔۔
ہائے مر جائیں گے، ہم تو لُٹ جائیں گے۔۔
ایسی باتیں کیا نہ کرو۔۔

تم ہی سوچو ذرا، کیوں نہ روکیں تمہیں۔۔
جان جاتی ہے جب اٹھ کے جاتے ہو تم۔۔
تم کو اپنی قسم جانِ جاں۔۔
بات اتنی میری مان لو۔۔

آج جانے کی ضد نہ کرو

Comments

comments

//pagead2.googlesyndication.com/pagead/js/adsbygoogle.js

اپنا تبصرہ بھیجیں