انٹرنیٹ کی دنیا سے متعلقہ کچھ حقائق . کیا آپ اس سے واقف ہیں؟

 انٹرنیٹ ایک ایسا ذریعہ ہے جس کی بدولت ہم پوری دنیا میں کہیں پر بھی ہونے والے حالات و واقعیات سے باخبر رہ سکتے ہیں۔ اسی وجہ سے انٹرنیٹ کو ایک انقلابی ایجاد کے طور پر جانا جاتا ہے۔ جیسا کہ انٹرنیٹ تو آپ کو باخبر رکھتا ہی ہے لیکن آپ انٹرنیٹ کے بارے کیا جانتے ہیں؟ آج کل انٹرنیٹ کے لفظ اور اس کی اہمیت سے تو ہر کوئی واقف ہے لیکن اس سے وابستہ چند دلچسپ حقائق بھی ہیں جن کے بارے میں بہت ہی کم لوگ واقف ہوں گے۔

جیسا کہ بہت کم لوگ جانتے ہیں کہ دنیا کی سب سے پہلی ویب سائٹ مارچ 1989 میں متعارف کروائی تھی اور یہ ویب سائٹ آج بھی لائیو ہے
 اس ویب سائٹ کا ایڈریس یہ ہے

http://info.cern.ch/hypertext/WWW/Bibliography.html

انٹرنیٹ پر دنیا بھر میں روزانہ تقریباً 247 بلین ای میل بھیجی جاتی ہیں- تاہم ان میں سے 90 فیصد اسپیم یا وائرس پر مشتمل ہوتی ہیں- اس لیے کسی بھی غیر متعلقہ ای میل کو کھولتے وقت ہمیشہ احتیاط سے کام لیںتاکہ آپ وائرس سے محفوظ رہ سکیں،

مشہور سماجی رابطے کی ویب سائیٹ ٹویٹر پر سب سے پہلا ٹویٹ 21 مارچ 2006 کو ٹویٹر کے بانی (Jack Dorsey)  جیک ڈور سے کی طرف سے کیا گیا تھا۔

 جیسا کہ آپ جانتے ہیں کہ یو ٹیوب ایک وسیع آن لائن میڈیا کے طور پر جانی  جانے والی مشہور ویب سائیٹ ہے لیکن شائد آپ نہیں جانتے کہ روزانہ صرف ایک منٹ کے مختصر ٹائم کے دوران یوٹیوب پر 300 گھنٹوں پر مشتمل ویڈیوز اپ لوڈ کی جاتی ہیں۔

چین میں انٹرنیٹ استعمال کرنے والوں کی تعداد 632 ملین ہے اور ایک اندازے کے مطابق 23 ملین صارفین مکمل طور پر ایک نشے کی مانند استعمال کرتے دکھائی دیتے ہیں اور اب تو اس بُری عادت سے لوگوں کو نجات دلانے کے لیے باقائدہ طور پر کیمپ بھی قائم کیے گئے ہیں ایسا چینی صارفجو 6 گھنٹے سے زائد وقت انٹرنیٹ پر استعمال کرے اسے اس نشے کا عادی قرار دیا جاتا ہے۔

عام طور پر یہ سمجھا جاتا ہے کہ انٹرنیٹ ٹریفک زیادہ تر جیتے جاگتے صارفین پر مشتعمل ہوتی ہے۔ جو کہ گُھومتے پھرتے ایک ویب سائیٹ سے دوسری ویب سائیٹ پر آتی جاتی رہتی ہے۔ لیکن یہ حقیقت کہ برعکس ہے اصل میں یہ ٹریفک ایک خود کار سسٹم کے تحت آتی جاتی رہتی ہےجس کا حقیقت سے دور تک کا واسطہ نہیں ہوتا۔ 

گزشتہ چند سالوں کے دوران سماجی رابطے کی ویب سائیٹ ٹویٹر ایک پسندیدہ ویب سائیٹ بن کر اُبھری ہے ۔آج کل ہر روز 500 ملین سے زائد ٹویٹ کی جاتی ہے ۔ جن میں خبروں تبصروں یہاں تک کہ ہماری روز مرہ کی کی جانے والی ایکٹیوٹیز بھی ہمیں ٹویٹ کی صورت میں دکھائی دیتی ہیں۔

ہیکرز کی جانب سے مختلف ٹولز استعمال کرتے ہوئے روزانہ 30 ہزار سے زائد ویب سائیٹس ہیکنگ کا نشانہ بنتی ہیں۔

اس وقت امریکہ کی 88 فیصد جبکہ ناروے کی 98 فیصد آبادی انٹرنیٹ استعمال کرتی ہے۔

Comments

comments

//pagead2.googlesyndication.com/pagead/js/adsbygoogle.js

اپنا تبصرہ بھیجیں