ہم نے غزلوں میں تمہیں ایسے پکارا محسن…

ہم نے غزلوں میں تمہیں ایسے پکارا محسن…
جیسے تم ہو کوئی قسمت کا ستارا محسن..

اب تو خود کو بهی نکهارا نہیں جاتا ہم سے…
وہ بهی کیا دن تهے کہ تجھ کو بهی سنوارا محسن…

اپنے خوابوں کو اندھیروں کے حوالے کر کے..
ہم نے صدقہ تیری آنکهوں کا اتارا محسن…

ہم کو معلوم ہے اب لوٹ کہ آنا تیرا….
گر نہیں ممکن مگر پهر بهی خدارا محسن..

ہم تو رخصت کی گهڑی تک بهی نہ سمجهے…
سانس دیتی رہی ہجرت کااشارہ محسن…

Comments

comments

//pagead2.googlesyndication.com/pagead/js/adsbygoogle.js

اپنا تبصرہ بھیجیں