جس سمت بھی دیکھوں نظر آتا ہے کہ تم ہو

جس سمت بھی دیکھوں نظر آتا ہے کہ تم ہو اے جانِ جہاں یہ کوئی تم سا ہے کہ تم ہو یہ خواب ہے خوشبو ہے کہ جھونکا ہے کہ پل ہے یہ دھند ہے بادل ہے کہ سایہ ہے کہ تم ہو اس دید کی ساعت میں کئی رنگ ہیں لرزاں میں ہوں کہ مزید پڑھیں

تجھ سے بچھڑ کے ہم بھی مقدر کے ہو گئے

تجھ سے بچھڑ کے ہم بھی مقدر کے ہو گئے پھر جو بھی در ملا ہے اسی در کے ہو گئے پھر یوں ہوا کہ غیر کو دل سے لگا لیا اندر وہ نفرتیں تھیں کہ باہر کے ہو گئے کیا لوگ تھے کہ جان سے بڑھ کر عزیز تھے اب دل سے محو نام مزید پڑھیں

کب ہم نے کہا تھا ہمیں دستار و قبا دو

کب ہم نے کہا تھا ہمیں دستار و قبا دو (احمد فراز) کب ہم نے کہا تھا ہمیں دستار و قبا دو ہم لوگ نوا گر ہیں ہمیں اِذنِ نوا دو ہم آئینے لائے ہیں سرِ کُوئے رقیباں اے سنگ فروشو یہی الزام لگا دو لگا ہے کہ میلہ سا لگا ہے سرِ مقتل اے مزید پڑھیں