سائنس دانوں نے لچک دار فون بیٹری تیار کرلی

زیورخ : سوئٹزرلینڈ کے سائنسدانوں نے ایک ایسی بیٹری تیار کرلی ہے جو بے حد لچک دار ہے۔ اسے لپیٹا کھینچا اور مروڑا جاسکتا ہے مگر اس کے بعدبھی یہ اپنا کام آسانی سے کرسکتی ہے۔

ٹیکنالوجی کے مشہور ادارے ‘سوئس فیڈرل انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی زیورخ ‘ میں فون بیٹری تیار کرنے والی تحقیقاتی ٹیم کا کہنا ہے کہ اگرچہ اب تک لچک دار برقی آلات کی تیاری میں خاصی پیش رفت ہوچکی ہے لیکن انہیں توانائی پہنچانے والی بیٹریاں بالکل بے لچک ہیں جس کے باعث وہ اب تک عام استعمال میں نہیں آسکی ہیں ۔ویسے تو یہ اسمارٹ فونز میں استعمال ہونے والی عام لیتھیم آئن بیٹری ہے لیکن لچک دار برقیرے (الیکٹروڈز) اس کی اہم ترین انفرادیت ہیں جنہیں ایک خاص مادّے سے تیار کیا گیا ہے۔ علاوہ ازیں، بیٹری کے دوسرے تمام حصے تیار کرنے میں بھی لچک دار مادوں کا خصوصی استعمال کیا گیا ہے۔ اسے ڈاکٹریٹ کے طالب علم ژی چن نے دریافت کیا ہے ۔

واضح رہے کہ یہ پہلا موقع ہے جب کوئی ایسی لچک دار لیتھیم آئن بیٹری تیار کرنے میں کامیابی ملی ہے جو الیکٹروڈز سمیت تمام لچک دار حصوں پر مشتمل ہے۔فی الحال اس کا پروٹوٹائپ ہی تیار کیا گیا ہے جو کسی موٹی اور سیاہ پلاسٹک فلم کی طرح دکھائی دیتا ہے۔ آزمائش کے دوران اسے رول کیا گیا ، کھینچا گیا اور تولیے کی طرح نچوڑ ا بھی گیا لیکن تمام مرحلوں سے گزرنے کے بعد بھی اس بیٹری نے کام کرنا نہیں چھوڑا ۔ مستقبل میں اسے لچک دار برقی آلات کے ساتھ کپڑے کا حصہ بنایا جاسکے گا جبکہ یہ جسم کے اندر، لچک دار حصوں کے ساتھ نصب ہونے والے طبّی آلات کو توانائی پہنچانے کا کام بھی انجام دے سکیں گی۔ تاہم ابھی تک یہ نہیں بتایا گیا کہ یہ بیٹری کب تک مارکیٹ میں دستیاب ہوں گی ۔

News Source

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں